غزل ۔ڈاکٹرفقیرا خان فقری


دندناتا ہوا جس روز نکل آئے گا
شہر کا بھوت مرے کھیت نگل جائے گا


آک ٹیلوں پہ رہیں گے نہ شجر کیکر کے
دل گڈریا ہے کہاں روز غزل گائے گا؟


پھول سرسوں کے کھلیں گے نہ مہک پھیلے گی
شہرترکول جو فطرت پہ چھڑک جائے گا


میں کہاں جاؤں گا اب سوچ رہا ہوں فقری
وقت ویرانوں میں بازار اٹھا لا ئے گا

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s